مل گیا سب کچھ جہاں میں تمہیں پانے کے بعد

tumhain panay ke bad

مل گیا سب کچھ جہاں میں تمہیں پانے کے بعد
کیا، کچھ اور باقی ہے سوچتا ہوں تمہیں پانے کے بعد

یہ کس نیکی کا صلہ ہے، رب کی عطا ہے مجھ پر
کہ لکھ دیا میری قسمت میں تمہیں بنانے کے بعد

میں روٹھتا ہوں بڑے پیار سے منا لیتی ہوتم مجھے
میں ڈرتا ہوں کون منائے گا اس طرح تیرے جانے کے بعد

رہے میری زندگی میں تیرا ساتھ آخری سانس تک
بس اک یہ ہی دعا ہے میری تمہیں پانے کے بعد

تمہیں کسی اور کا اور ہمیں تمہارا کردیا

معاشرے کی بندشوں نے ہمیں ناکارہ کر دیا
تمہیں کسی اور کا اور ہمیں تمہارا کردیا

تو خود تو ہو گئی پاکیزگی کا پیکر
لوگوں کے سامنا ہمیں آوارہ کر دیا

اب کچھ نہیں بچا اس حقیر کی جھولی میں
دل ہی تھا وہ بھی تیرے نام سارا کا سارا کر دیا

تیری بے وفائی کی میں کیا داد دوں کہ
مجھے بھی ساتھ رکھا اور اسے بھی اشارہ کر دیا

اس نے محبت کی یہ کہانی بنا کر انس
عاشق اور عشق دونوں کو بے سہارا کر دیا