پلکیں اٹھا کر پلکیں جکایا نہ کرو

urdu-ghazal

پلکیں اٹھا کر پلکیں جکایا نہ کرو
بات کو یونہی تم الجھایا نہ کرو
زخم بدل جاتے ہیں ناسور کی صورت
درد ذرا سا بھی ہو چھپایا نہ کرو
الجھا دیں گی دست شناسوں کی باتیں
تم اپنا ہاتھ کسی کو دکھایا نہ کرو
کچھ روز تو یاد رکھو احسان کسی کا
اتنی جلدی کسی کو بھول جایا نہ کرو
چڑھے دریا خود اُتَر جاتے ہیں انجم
ذرا سی طغیانی دیکھ کر گھبرایا نہ کرو

تبصرہ کریں