اب تو ہر ہاتھ کا پتھر ہمیں پہچانتا ہے

rahat-indori-30

اب تو ہر ہاتھ کا پتھر ہمیں پہچانتا ہے
عمر گزری ہے ترے شہر میں آتے جاتے

تبصرہ کریں