سیاست مفادات میں کھو گئی ہے

sayasat mafadat mein kho gayi hai

سیاست مفادات میں کھو گئی ہے
حکومت نجانے کہاں سو گئی ہے

عوامی مسائل انہیں تب دکھے ہیں
کہ جب ان کی مدت ختم ہو گئی ہے

نئے حکمراں آ کے یہ بولتے ہیں
بری تھی حکومت بہت جو گئی ہے

وہ بیرونی امداد کا تو بتائیں
کہاں سے تھی آئی کدھر کو گئی ہے

معیشت بھی ابتر زراعت بھی ابتر
مصیبت نری ہر طرف ہو گئی ہے

یہاں جو بھی پارٹی قیادت میں آئی
وہ "گنگا میں بہتی” نہا دھو گئی ہے

دعا ہے یہ احسن کہ ہو جائے بہتر
ہمار ی جو حالت تباہ ہو گئی ہے

تبصرہ کریں