کوئی میرے لیے تجھ سا نہیں تھا

کوئی میرے لیے تجھ سا نہیں تھا
ستم یہ ہے تو ہی اپنا نہیں تھا

بغیر اسکے مجھے جینا پڑیگا
کبھی میں نے تو یہ سوچا نہیں تھا

میری آنکھوں کا دھوکہ تھا یقینا
کبھی بھی عشق یہ سچا نہیں تھا

یہ راستے ہر قدم تھے ساتھ میرے
میں تنہا ہو كے بھی تنہا نہیں تھا

زمانے كے لیے ھوگا وہ محسن
میرے حق میں کبھی اچھا نہیں تھا

مقدر بن گیا زمرین وہ ہی
جسے میں نے کبھی چاہا نہیں تھا

تبصرہ کریں