ہونٹوں کو روز اک نئے دریا کی آرزو

wasim-barelvi poetry

ہونٹوں کو روز اک نئے دریا کی آرزو
لے جائے گی یہ پیاس کی آوارگی کہاں

تبصرہ کریں