چاندنی چاند کی بن، رات بھر تیرا خیال رہا

chaandni raat

چاندنی چاند کی بن، رات بھر تیرا خیال رہا
ہو گا کہاں شب غم ، دِل میں یہ سوال رہا

کبھی یاد کیا وفا کو تیری ، کبھی آئی جفا یاد
رہی کشمکش یہی ، یہی رات بھر حال رہا

ہوئے تھے جس كے قیدی ، کبھی وقت فرصت
سامنے نظر كے ، تیری زلفوں کا جال رہا

آیا وقت یاد اپنا ، بن بن كے درد عامر
جب تھا پاس ہمارے ، جب وصال رہا

تبصرہ کریں