میرے دستِ دامن میں یہ جو چند خوشیاں ہیں

chand khushian

میرے دستِ دامن میں یہ جو چند خوشیاں ہیں
یہ بھی مجھ کو پرائی سی لگتی ہیں
دیکھوں اگر ان غموں کو
تو یہ بھی کسی كے دیئے لگتے ہیں
سوچوں اگر اِس فلسفہ زندگی کو نبیل
تو بس موت اپنی ، باقی یہ سانسیں بھی امانت سی لگتی ہے

تبصرہ کریں