بے نام سے اک خوف سے دل کیوں ہے پریشاں

kun dil he pareshan

بے نام سے اک خوف سے دل کیوں ہے پریشاں
جب طے ہے کہ کچھ وقت سے پہلے نہیں ہوگا

تبصرہ کریں