بڑا شور سنتے تھے پہلو میں دل کا

dil ka shor

بڑا شور سنتے تھے پہلو میں دل کا
جو چیرا تو اک قطرۂ خوں نہ نکلا

تبصرہ کریں