برسوں گزر گئے رو کر نہیں دیکھا

four-line-poetry-in-urdu

برسوں گزر گئے رو کر نہیں دیکھا
آنكھوں میں نیند تھی سو کر نہیں دیکھا
وہ کیا جانے درد محبت کا
جس نے کسی کا ہو کر نہیں دیکھا

تبصرہ کریں