اک خواب مسلسل آتا ہے

khwab-poetry

اک خواب مسلسل آتا ہے
تیرا چہرہ نیند سجاتا ہے

پھولوں پہ بھنورے کی مانند
میرے دِل کو وہ بہلاتا ہے

آنكھوں كے سرمئی رنگوں سے
میرے من کو راہ دکھاتا ہے

اپنے لمس کی بھینی خوشبو سے
میرے احساس کو وہ مہکاتا ہے

دھڑکن كے سَر اور سرگم پے
وہ مجھ کو گیت سناتا ہے

چند سے لے کر حسنِ سوغات
وہ مجھ کو ہر پل بہلاتا ہے

اپنے سانسوں کی دھیمی آنچ پہ
میرے تن کو وہ سلگاتا ہے

اک خواب مسلسل آتا ہے
تیرا چہرہ نیند سجاتا ہے

تبصرہ کریں