سفر کے واسطے کچھ اسباب آج دے ڈالو

سفر کے واسطے کچھ اسباب آج دے ڈالو
بہت سی دعائیں اور نئے خواب دے ڈالو

میرے غموں نے میرے چراغوں کو بجھا رکھا ہے
راہ میں روشنی كے لیے کچھ ماہتاب آج دے ڈالو

وقت کی آگ نے جسم کو جلا كے خاک کیا
کفن كے واسطت تھوڑا سا کمخواب آج دے ڈالو

مجھے صنم كے حضور جانے كے واسطے یارو
پی كے نا بہکوں ایسی شراب آج دے ڈالو

تمھارے عشق میں یوں کھویا كے خدا نہ یاد رہا
میرے سب سجدوں کو منبر و محراب آج دے ڈالو

تبصرہ کریں