اِس شہر میں کتنے چہرے تھے کچھ یاد نہیں سب بھول گئے

اِس شہر میں کتنے چہرے تھے کچھ یاد نہیں سب بھول گئے
اک شخص کتابوں جیسا تھا وہ شخص زبانی یاد ہوا

تبصرہ کریں