یوں زندگی کی راہ میں ٹکرا گیا کوئی

Funny-Ghazal

یوں زندگی کی راہ میں ٹکرا گیا کوئی
خود نیچے اتر کر مجھ کو لٹکا گیا کوئی

رسما ہی میں نے پوچھ لیا کچھ کھائیے جناب
گھر میں جو کچھ پکا تھا سب کھا گیا کوئی

ویگن میں بڑی زور سے میں چییخی
میرے پاؤں کو جب سینڈل سے دبا گیا کوئی

مجھے بڑا مزا آیا کیلا کھاتے ہوئے
لیکن افسوس ہویا جب روڈ پر پھسل گیا کوئی

جب چیٹنگ کرتے ہوئے میں نے کسی کو پاگل کھا
بڑی خوشی سے جب جھوم اٹھا ہرکوئی

میرا کیا جرم تھا دوست کامران یہ تو بتا
جب سی ڈی كے بہانے گھر میں چلا آیا کوئی

وہ ایک لمحے کا سفر آج بھی یاد ہے مجھے
جب اچانک دِل كے خانے میں بس گیا کوئی

تم کیا سمجھو دِل کی بات کزن محسن
انپی باتوں سے دِل میں جب اتر گیا کوئی

میں اِس قابل تو نہیں کے کوئی مجھے کو چاھے
لیکن بنا پوچھے مجھ کو چاہ گیا کوئی

مدت سے دِل کے آنگن میں لوڈ شیڈنگ تھی حنا
اپنے حسن كے بلب اِس میں جلا گیا کوئی

تبصرہ کریں