اس کی حسرت ہے جسے دل سے مٹا بھی نہ سکوں

ameer minai dil se

اس کی حسرت ہے جسے دل سے مٹا بھی نہ سکوں
ڈھونڈنے اس کو چلا ہوں جسے پا بھی نہ سکوں

تبصرہ کریں