شک رواں کی نہر ہے اور ہم ہیں دوستو

bewafa-poetry بے وفا

شک رواں کی نہر ہے اور ہم ہیں دوستو
اس بے وفا کا شہر ہے اور ہم ہیں دوستو

تبصرہ کریں