ملا جو موقع تو روک دوں گا جلالؔ روز حساب تیرا

hisab tera

ملا جو موقع تو روک دوں گا جلالؔ روز حساب تیرا
پڑھوں گا رحمت کا وہ قصیدہ کہ ہنس پڑے گا عذاب تیرا

تبصرہ کریں