لوگ دیتے رہے کیا کیا نہ دلاسے مجھ کو

zakhm gehra hi sahi

لوگ دیتے رہے کیا کیا نہ دلاسے مجھ کو
زخم گہرا ہی سہی زخم ہے بھر جائے گا

تبصرہ کریں