کیا خوب شام تھی جوان وہ

aamir-ghazal

کیا خوب شام تھی جوان وہ
رَو رہا تھا گلے لگ كے نادان وہ

نا ملے تو مر جاؤں گا یہ کہا اس نے
چھوڑ کر ہمیں کر گیا حیران وہ

نہ کوئی رشتہ رہا نہ کوئی وفا
چلا گیا بن كے انجان وہ

کہا اس نے كے میں صرف تیرا
جھوٹا تھا کتنا انسان وہ

آئے گا خیال تو روئے گا عامر
اک دن ضرور ہو گا پشیماں وہ

تبصرہ کریں