کچھ لوگ جو سوار ہیں کاغذ کی ناؤ پر

Kuch Log Jo- ehsan danish poetry

کچھ لوگ جو سوار ہیں کاغذ کی ناؤ پر
تہمت تراشتے ہیں ہوا کے دباؤ پر

تبصرہ کریں