بہت تھا خوف جس کا پھر وہی قصا نکل آیا

rishta nikal aya

بہت تھا خوف جس کا پھر وہی قصا نکل آیا
مرے دکھ سے کسی آواز کا رشتا نکل آیا

تبصرہ کریں