جدا تھے ہم تو میسر تھیں قربتیں کتنی

judai-shair

جدا تھے ہم تو میسر تھیں قربتیں کتنی
بہم ہوئے تو پڑی ہیں جدائیاں کیا کیا

تبصرہ کریں