ہر ایک کانٹے پہ سرخ کرنیں ہر اک کلی میں چراغ روشن

kahan nahi hai josh

ہر ایک کانٹے پہ سرخ کرنیں ہر اک کلی میں چراغ روشن
خیال میں مسکرانے والے ترا تبسم کہاں نہیں ہے

تبصرہ کریں