آنکھ جو کچھ دیکھتی ہے لب پہ آ سکتا نہیں

dunya kya se kya iqbal

آنکھ جو کچھ دیکھتی ہے لب پہ آ سکتا نہیں
محو حیرت ہوں کہ دنیا کیا سے کیا ہو جائے گی

تبصرہ کریں