میں ابھی طفلِ مکتب ہوں مجھ کو سمجھایا جائے

dil ko samjhaya

میں ابھی طفلِ مکتب ہوں مجھ کو سمجھایا جائے
دِل مر سا گیا ہے ، دفنایا جائے كہ جلایا جائے

تبصرہ کریں