چپ کہیں اور لیے پھرتی تھی باتیں کہیں اور

chup kahin aur liye phirti

چپ کہیں اور لیے پھرتی تھی باتیں کہیں اور
دن کہیں اور گزرتے تھے تو راتیں کہیں اور

تبصرہ کریں