چند امیدیں نچوڑی تھیں تو آہیں ٹپکیں

Chand Umeedain Nichori Thi

چند امیدیں نچوڑی تھیں تو آہیں ٹپکیں
دل کو پگھلائیں تو ہو سکتا ہے سانسیں نکلیں

تبصرہ کریں