ابھی تو ہم نے اپنی دنیا بسانی تھی

urdu ghazal

ابھی تو ہم نے اپنی دنیا بسانی تھی
اور اک داستاں بھی تجھے سنانی تھی
تم نے پہلے ہی ختم کر دیا سب کچھ
ابھی تو میں نے گھر بھی بات منوانی تھی
مطلب تیری یاد سے بھی غافل ہو جاؤں
یہی تو اک تیری آخری نشانی تھی
ہوئی پتا نہیں مکمل غزل کیسے ؟
ابھی تو میں نے قلم بھی اٹھانی تھی

guest
0 Comments
Inline Feedbacks
تمام تبصرے دیکھیں