صبح و شام فلسطیں میں خوں بہتا ہے

habib jalib 4 line

صبح و شام فلسطیں میں خوں بہتا ہے
سایۂ مرگ میں کب سے انساں رہتا ہے
بند کرو یہ باوردی غنڈہ گردی
بات یہ اب تو ایک زمانہ کہتا ہے

تبصرہ کریں