کاش کے کوئی ہمارا وفا دار یار ہوتا

کاش کے کوئی ہمارا وفا دار یار ہوتا
سینہ تان کے چلتے بے وفاؤں کی گلیوں میں

تبصرہ کریں