ایک بے وفا سے دوستی لگا کر رو پڑے

ایک بے وفا سے دوستی لگا کر رو پڑے
اسے دوبارہ دیکھ کر خوشی سے رو پڑے
وہ تو دوست کی شکل میں تھا ہی بے وفا
اسے اپنا دِل دے کر رو پڑے

تبصرہ کریں