عشق اک میر بھاری پتھر ہے

Mir-taqi-mir-shayari

عشق اک میر بھاری پتھر ہے
کب یہ تجھ ناتواں سے اٹھتا ہے

تبصرہ کریں