یہ جو رات دن میرے ساتھ ہیں ، وہی اجنبی کے ہیں اجنبی

یہ جو رات دن میرے ساتھ ہیں ، وہی اجنبی کے ہیں اجنبی
وہ جو دھڑکنوں كے اَساس تھے ، وہی لوگ مجھ سے بچھڑ گئے

تبصرہ کریں