کرنے گئے تھے اس سے تغافل کا ہَم گلہ

کرنے گئے تھے اس سے تغافل کا ہَم گلہ
کی اک ہی نگاہ کے بس خاک ہو گئے

تبصرہ کریں