یوں تو ہر کی غلطی کو سلجھایا تو نے

bewafa-poetry

یوں تو ہر کی غلطی کو سلجھایا تو نے
پِھر کیوں نا میری غلطی کو بھلایا تو نے
میں تو انجان تھا اِس راہ سے بالکل
پِھر کیوں اِس پر چلنے کو اکسایا تو نے
عشق نہ تھا تو غم نہ تھا زندگی میں
غم کس کو کہتے ہے بتلایا تو نے
اشکوں سے یہی آہ نکلتی ہے اب تو عاصم
لوٹ آؤ کہ بہت ہے ستایا تونے

تبصرہ کریں