کب سے اپنی تلاش میں گم ہوں

Ek-Qitta-by-Nasir-Kazmi

کب سے اپنی تلاش میں گم ہوں
اے خدا مجھ کو مجھ پہ افشا کر

کون بانٹے گا دکھ تیرے ناصر
دوستوں سے بھی چُھپ كہ رویا کر

تبصرہ کریں