اِس قدر پیار سے اے جان جہاں رکھا ہے

اِس قدر پیار سے اے جان جہاں رکھا ہے
دِل كے رخصار پہ اِس وقت تیری یاد نے ہاتھ
یوں گماں ہوتا ہے گرچہ ہے ابحی صبح فراق
ڈھل گیا ہجر کا دن آ بھی گئی وصل کی رات

تبصرہ کریں