پھرتے ہے میر خوار کوئی پُوچھتا ہی نہیں

Mir-Taqi-Mir poetry

پھرتے ہے میر خوار کوئی پُوچھتا ہی نہیں
اِس عاشقی میں تو عزت سادات بھی گئی

تبصرہ کریں